Latest Urdu news from Pakistan - Peshawar, Lahore, Islamabad

آشیانہ ہاؤسنگ سکیم کیس میں ضمنی ریفرنس دائر،شہباز شریف،احد چیمہ،فواد حسن فواد سمیت 13افراد نامزد 

3والیم اور 1ہزار سے زائد صفحات پر مشتمل ریفرنس میں نامزد دیگر افراد میں ندیم ضیا، کامران کیانی، شاہد شفیق، بلال قداوائی ،منیر ضیا، خالد حسین، علی ساجد، چوہدری شفیق، امتیاز حیدر اور چوہدری شاہد شامل،شہباز شریف نے افسران سے ملکر باقاعدہ منصوبہ بندی کے تحت خزانے کو نقصان پہنچایا'ضمنی ریفرنس 

لاہور۔قومی احتساب بیورو(نیب)لاہورنےاحتساب عدالت میں آشیانہ اقبال ہاؤسنگ سکیم کیس میں ضمنی ریفرنس دائرکردیا جس میں قومی اسمبلی میں قائدحزب اختلاف و سابق وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف،سابق ڈی جی ایل ڈی اےاحمد چیمہ اورنوازشریف کےسابق پرنسپل سیکرٹری فواد حسن فواد سمیت 13افراد کو نامزد کیاگیا ہے ۔

نیب حکام نےاحتساب عدالت کے جج سید نجم الحسن کی عدالت میں ضمنی ریفرنس دائرکیا۔ضمنی ریفرنس 3والیم اور1ہزار سے زائد صفحات پر مشتمل ہے۔

آشیانہ اقبال ریفرنس میں شہبازشریف،فواد حسن فواد،احد خان چیمہ،ندیم ضیا،کامران کیانی،شاہد شفیق،بلال قداوائی،منیر ضیا،خالد حسین،علی ساجد، چوہدری شفیق،امتیازحیدراورچوہدری شاہد کونامزد کیاگیا ہے۔ضمنی ریفرنس کےمطابق آشیانہ اقبال کی انکوائری10جنوری کوشروع کی گئی،4مئی کو کیس میں تحقیقات کا آغاز کیاگیا،شہباز شریف نےافسران سےملکر باقاعدہ منصوبہ بندی کےتحت خزانے کو نقصان پہنچایا۔

شہبازشریف نے2014ءمیں غیرقانونی احکامات جاری کیے،مارچ 2014میں شہبازشریف نےآشیانہ اقبال پراجیکٹ کا دورہ کیا اورغیر قانونی حکم دیتے ہوئے پی ایل ڈی سی کا بڈنگ پراسس روکنے کا حکم دیا۔

پی ایل ڈی سی دسمبر2013ء میں آشیانہ اقبال پراجیکٹ کو چلا رہی تھی،شہباز شریف نےسائٹ وزٹ کرکےپراجیکٹ منتقل کرنیکا فیصلہ کیا۔شہبازشریف نےخود فیصلہ کیا کہ پراجیکٹ پبلک پارٹنرشپ ماڈل میں منتقل کردیا جائے۔

دوسری جانب اپوزیشن لیڈرشہباز شریف اسلام آباد میں ہیں،ان کی لاہورروانگی منسوخ کردی گئی،طبی معائنےتک انہیں اسلام آباد میں ہی رکھا جائے گا۔وزراء کالونی میں شہبازشریف کی رہائش کو سب جیل کا درجہ دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ 5 اکتوبر کو نیب لاہور نے سابق وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کو صاف پانی اسکینڈل کے حوالے سے بیان ریکارڈ کرانے کے لیے طلب کیا تھا،تاہم انہیں آشیانہ ہائوسنگ اسکینڈل میں گرفتار کرلیا گیا تھا۔

شہباز شریف کی گرفتاری کےبعد نیب نےبیان میں کہاگیاتھاکہ شہباز شریف نےآشیانہ ہائوسنگ اسکیم کا کنٹریکٹ لطیف اینڈ سنز سے منسوخ کر کے کاسا ڈویلپرز کو دیا جس سے قومی خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان ہوا جس کےلیےمزید تفتیش درکارہے۔

شہباز شریف پریہ بھی الزام ہےکہ انہوں نےپی ایل ڈی سی پر دبائو ڈال کرآشیانہ ہائوسنگ اسکیم کا تعمیراتی ٹھیکہ ایل ڈی اے کو دلوایا لیکن ایل ڈی اے منصوبہ مکمل کرنےمیں ناکام رہا اوراس سے71 کروڑ روپےسےزائد کا نقصان ہوا۔

یہ بھی یاد رہےکہ آشیانہ ہائوسنگ اسکینڈل میں شہبازشریف سےقبل فواد حسن فواد،سابق ڈی جی ایل ڈی اےاحد چیمہ،بلال قدوائی،امتیاز حیدر،شاہد شفیق،اسرارسعید اورعارف بٹ کو نیب نےاسی کیس میں گرفتارکیاتھا جبکہ دو ملزمان اسرارسعید اورعارف بٹ ضمانت پررہا ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.