Latest Urdu news from Pakistan - Peshawar, Lahore, Islamabad

اصغر خان عملدرآمد کیس:چیف جسٹس کا ایف آئی اے کو تحقیقاتی رپورٹ پیش کرنےکاحکم

پولیس نے رات کو اٹھا کر نوٹس پر مجھ سے دستخط لیے، مہربانی کریں آخر میرا قصور کیا ہے جاوید ہاشمی عدالت میں پیش جاوید ہاشمی کو نوٹس جاری نہ کریں، جاوید ہاشمی کی بہت عزت اور احترام کرتا ہوں چیف جسٹس ثاقب نثار

اسلام آباد۔سپریم کورٹ کےچیف جسٹس ثاقب نثارنےاصغرخان عملدرآمد کیس میں ایف آئی اےکو6 ہفتےمیں تحقیقات کرکےرپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

جمعہ کوسپریم کورٹ میں چیف جسٹس ثاقب نثارکی سربراہی میں اصغرخان عملدرآمد کیس کی سماعت ہوئی،سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی عدالت میں پیش ہوئے اورکہاکہ عدالت ہمیں بلا لیتی ہے چیف جسٹس نےکہا کہ عدالت نےآپ کو نہیں بلایا،جاوید ہاشمی نے عدالت کو بتایا کہ پولیس نے رات کو اٹھا کرنوٹس پرمجھ سے دستخط لیے،مہربانی کریں آخر میرا قصور کیا ہے۔

جاوید ہاشمی نےکہاکہ کیا آپ کو وہ وقت یاد ہےجب آپ نے میرا ہاتھ چوما تھا،چیف جسٹس نےکہاکہ آپ نےسب کےسامنے بتا دیا اب تو میں کیس سننے کیلئے نااہل ہوگیا ہوں۔

چیف جسٹس نےریمارکس میں کہاکہ اصغر خان کیس کےفیصلے کےبعد تحقیقات ایف آئی اےکوکرنی ہے،ایف آئی اےسےتحقیقات کی رپورٹ مانگ رہے ہیں،جاوید ہاشمی کو نوٹس جاری نہ کریں،جاوید ہاشمی کی بہت عزت اور احترام کرتا ہوں جبکہ ایف آئی اے 6 ہفتے میں تحقیقات کر کے رپورٹ دے۔

لیاقت جتوئی نے عدالت سےکہاکہ میں آئی جے آئی کا حصہ نہیں تھا،پھر بھی باربارنوٹس آ جاتاہے،چیف جسٹس نےریمارکس میں کہاکہ ایف آئی اے عزت اوراحترام کے تقاضے پورے کرے،ثبوت نہیں بنتے تو ایف آئی اے بتا دے تاکہ لوگوں کو بری کریں، لوگوں کی تضحیک نہیں کرنی جس پر ڈی جی ایف آئی اے نے کہا کہ ابھی تک کسی کے خلاف ثبوت نہیں ملا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.