Latest Urdu news from Pakistan - Peshawar, Lahore, Islamabad

امان اللہ کنرانی نےجسٹس قاضی فائزعیسیٰ کےخلاف ریفرنس دائرکرنےپراحتجاج کی کال دیدی

14جون کو عدالتوں کو تالےلگائیں گے،سڑکوں پر نہیں جائینگے ،آپ بتائیں قاضی فائز عیسیٰ کون سی شق کی خلاف ورزی کےمرتکب ہوئے ہیں؟اگرکورڈ آف کنڈیکٹ کی بات کریں توایک بھی جج یہاں نہیں رہےگا،ججز کے بارے میں فیصلوں کااختیارپارلیمنٹ کو ہونا چاہیے ،صدر سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن

اسلام آباد۔سپریم کورٹ بارایسوسی ایشن کےصدرامان اللہ کنرانی نےجسٹس قاضی فائز عیسیٰ کےخلاف ریفرنس دائرکرنےپراحتجاج کی کال دیتے ہوئےکہاہےکہ14جون کو عدالتوں کو تالےلگائیں گے،سڑکوں پرنہیں جائینگے،آپ بتائیں قاضی فائزعیسیٰ کون سی شق کی خلاف ورزی کےمرتکب ہوئےہیں؟اگرکورڈ آف کنڈیکٹ کی بات کریں توایک بھی جج یہاں نہیں رہےگا،ججز کےبارےمیں فیصلوں کااختیارپارلیمنٹ کوہونا چاہیے۔

صدر سپریم کورٹ بارایسوسی ایشن امان اللہ کنرانی نےمیڈیاسے گفتگوکرتےہوئےکہاکہ میرےخواہش ہےکہ ہم لمحہ بالمحہ قوم کوآگاہ کریں،کوئی یہ نہ کہےکہ اعلان کرکےچھپ گئے۔انہوں نےکہاکہ میں پیمرا کی پابندیوں کی مذمت کرتا ہوں۔انہوں نےکہاکہ عدلیہ کو انسانی حقوق پر نوٹس لینا چاہیے کہ پیمراہ نے پابندیاں کیوں لگائی؟۔

انہوں نےکہاکہ ریاست اکبر بگٹی کےزخم کو ابھی تک چاٹ رہی ہے،اب ایک بارپھربلوچستان کےجج کےساتھ ناروا سلوک ہورہاہے۔انہوں نےکہاکہ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کوناکردہ گناہوں کی سزا نہ دی جائے۔ انہوں نےکہاکہ ان شقوں کےمجرم اعلی عدلیہ میں دندناتےپھر رہےہیں،آپ بتائیں قاضی فائز عیسیٰ کون سی شق کی خلاف ورزی کےمرتکب ہوئےہیں؟اگرکورڈ آف کنڈیکٹ کی بات کریں توایک بھی جج یہاں نہیں رہے گا۔

انہوں نےکہاکہ جب آپ سیاست دانوں کوآرٹیکل62اور63 پرنااہل کردیتےہیں،اسی طرح ججوں کواپنےبارے میں فیصلہ کرنےکاحق نہیں ہونا چاہیے۔انہوں نےکہاکہ ججوں کےخلاف بھی فیصلہ کرنےکیلئےکوئی تیسراہوناچاہیے۔انہوں نےکہاکہ پالیمنٹ کےپاس اختیارہوناچاہیےکہ وہ ججزکےبارے میں فیصلہ کریں۔

انہوں نے کہاکہ ہم قاضی فائز عیسیٰ کو آپ کےسامنےشکارہونےکیلئےنہیں چھوڑیں گے۔انہوں نےکہاکہ ہم اکائونٹیبلٹی کےخلاف نہیں ہیں امتیازی سلوک کےخلاف ہیں۔انہوں نےکہاکہ ہم چیف جسٹس سمیت تمام ججزکا احترام کرتےہیں،اب روایتی احتجاج نہیں ہوگا۔انہوں نے کہاکہ اب احتجاج عدالتوں کےاندر ہوگا،ہم عدالتوں کوتالےلگائیں گے۔انہوں نےکہاکہ اب مجرم سڑکوں پرگسیٹےجائیں گے،ہم عدالت کےاندرآگ لگائیں گےسڑکوں پرنہیں جائیں گے۔

انہوں نےکہاکہ ہم کوئی معافی نہیں مانگیں گے، ہم توہیں عدالت کریں گے،جس نے جسٹس قاضی فائزعیسیٰ پر سیاست کی وہ ہماری لاشوں پرسیاست کرے،ہم اسلام کے کمزور پیمانے پر نہیں اعلی پیمانے پر جائیں گے۔انہوں نے کہاکہ جسٹس کھوسہ صاحب میں عدالت کے اندر اس ریفرنس کو آگ لگا دوں گا۔

کھوسہ صاحب آپ کی سرزمین بھی کوئی اچھی تاریخ نہیں رکھتی،کھوسہ صاحب ہم آپ کی عزت کرتےہیں لیکن آپ کےسسرعدالتی قتل کااعتراف کرچکے ہیں،ہم جس آصف کھوسہ کو جانتے ہیں اس نے عدلیہ کے لیے قربانی دی ہیں،امید کرتاہوں کہ چیف جسٹس اس ریفرنس کو پھاڑکر پھینک دیں گے۔انہوں نے کہاکہ ہمیں عدالت میں خون دینے والے مجنوں وکلاء کی ضرورت ہے،ہم بڑی بڑی فیسیں نہیں لیں گے۔ انہوں نے کہاکہ ہم کسی کی فون کال کاانتظارنہیں کریں گے،جنہوں نےفون کال سنیں وہ قوم کےمجرم ہیں۔انہوں نےکہاکہ جو سٹیج پر بیٹھ کر باتیں کرتے تھے وہ آج شرمندہ ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.