Latest Urdu news from Pakistan - Peshawar, Lahore, Islamabad

زیادتی کی کوشش کی گئی ہے،ڈی این اےسےفرشتہ کےساتھ زیادتی ثابت نہیں ہوئی،پولیس

آئندہ 24 سے36 گھنٹوں میں ملزمان کو میڈیا کےسامنےپیش کیاجائےگا،پولیس کا دعویٰ

اسلام آباد۔دس سالہ بچی فرشتہ کےقتل کیس کی تحقیقات کےمطابق ڈی این اےسےفرشتہ کےساتھ زیادتی ثابت نہیں ہوئی،ننھی فرشتہ کی لاش سےدوسرا کوئی ڈی این اے سویپ نہیں ملا۔

پولیس کے مطابق فرشتہ کےساتھ زیادتی کی کوشش کی گئی لیکن ڈی این اےسےزیادتی ثابت نہیں ہوئی۔پولیس کےمطابق مزاحمت پرملزم نے فرشتہ کو خنجر مارا، جس سے فرشتہ کا خون کافی زیادہ بہہ گیا، آئندہ 24 سے 36 گھنٹوں میں ملزمان کو میڈیا کے سامنےپیش کیاجائےگا۔

اس سےقبل فرشتہ قتل کیس میں پولیس کی مختلف ٹیموں نے تفتیش کا دائرہ کاروسیع کر دیا۔گزشتہ روزحاکم خان کی سربراہی میں سی آئی اےکےاسپیشل کرائم یونٹ نےتفتیش کا آغازکیا،کیس کی تفتیشی ٹیموں کو کیس کی روزانہ کی بنیاد پررپورٹ دینےکی ہدایت کی گئی۔

سی آئی اے ٹیم نے450گھروں سے380لوگوں کےریکارڈ کی چھان بین کی گئی۔ذرائع کےمطابق جیو فیگنسگ رپورٹ پر600لوگوں کی ٹیلی فون کالزکی سی ڈی آرسی آئی اےنےحاصل کرلی،پولیس نے کئی ٹیلی فونک کالزبھی ٹریس کی ہیں۔جیو فینسنگ کےمطابق فرشتہ15مئی کی شام والدہ کواپنی دوست وفاکےگھرجانےکاکہہ کرگھرسےنکلی،لیکن دوست کےگھرنہیں پہنچی۔

کیس کی سب سےاہم گرفتاری فرشتہ کاہمسایہ افغان باشندہ ناصرہے،جسےلاش ملنےکی جگہ سےحراست میں لیاگیا،ملزم گوجرخان کی خاتون کےقتل میں بھی ملوث تھا۔پولیس ذرائع کےمطابق فرشتہ کےگھرکےاطراف50 گھروں کاسروےکیاگیا،جائےوقوع سےجوس کاڈبہ اور پلاسٹک گلاس بھی ملے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.