Latest Urdu news from Pakistan - Peshawar, Lahore, Islamabad

صوبائی حکومت نےغریب عوام کو درپیش مسائل سامنےرکھ کر عوام دوست بجٹ پیش کیا۔شہرام خان ترکئی

پشاور۔خیبر پختونخوا کےوزیربلدیات،الیکشنز ودیہی ترقی شہرام خان ترکئی نےصوبائی اسمبلی میں بجٹ2019ـ20کےحوالےسےاظہار خیال کرتےہوئےکہا یےکہ تحریک انصاف کی صوبائی حکومت نےصوبےکےغریب عوام کو درپیش مسائل کو سامنےرکھ کرعوام دوست بجٹ پیش کیا۔ آئندہ مالی سال کے بجٹ میں ضم اضلاع، صحت، تعلیم، سیاحت اور مقامی حکومتوں سمیت صوبائی دارالحکومت پشاور اوردیگرکم ترقی یافتہ اضلاع کی اپ لفٹ پر بھرپور توجہ مرکوز رکھی گئی ہے۔

صوبائی وزیربلدیات کاصوبائی اسمبلی کےبجٹ سیشن سےخطاب کرتےہوئےکہناتھاکہ اپوزیشن کے انتہائی غیرذمہ دارانہ رویےکے باوجود اپوزیشن رہنماؤں کی اچھی تجاویز کو بجٹ میں شامل کریں گے۔

انہوں نےکہا کہ اپوزیشن کو تنقید برائےتنقید کی بجائےہمارےاچھےاقدامات کو سراہنا چاہیے۔شہرام خان ترکئی نےکہاکہ ہمارے گزشتہ دور حکومت میں صحت انصاف کارڈ کااجراءایک انقلابی قدم تھاجوکہ اب سیاسی ولسانی وابستگی سےبالاترہوکرصوبےکےہرشہری کوملےگا جبکہ اس کےساتھ ساتھ کینسرکاعلاج بھی مفت ہوگا جسکےلئےبجٹ میں820 ملین روپےرکھےگئےہیں۔

ضم اضلاع کےحوالےسےوزیربلدیات کاکہنا تھاکہ ان اضلاع کی ترقی اورعوام کی فلاح وبہبود کےلیےخطیررقم رکھناصوبائی حکومت کا احسن اقدام ہے۔

تاریخ میں پہلی مرتبہ ضم اضلاع کی ترقی کےلیے62 بلین روپےرکھےگئےہیں جوکہ وہاں کی عوام کامعیارزندگی بہتربنانےکےلیے استعمال ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ضم شدہ اضلاع کے عوام سب سے زیادہ توجہ کے مستحق ہیں اسی پیش نظر انہیں بجٹ میں زیادہ اہمیت دی گئی ہے۔ صوبائی وزیر بلدیات نے کہا کہ مقامی حکومتوں کے لیے 46 بلین روپے رکھے گئے ہیں جن میں ضم اضلاع کی مقامی حکومتیں بھی شامل ہوں گی,

صوبےکی معیشت کےحوالےسےشہرام خان ترکئی نےکہاکہ اسےترقی دینےکیلئےسیاحتی صنعت کوفروغ دیاجارہاہےاوراس مقصد کےحصول کیلئےمحکمہ بلدیات اورمحکمہ سیاحت مشترکہ طور پرکام کررہے ہیں۔انہوں نےکہاکہ جن علاقوں میں سیاحت کی زیادہ مواقع موجود ہیں ان علاقوں کوزیادہ ترقی دی جائےگی۔

شہرام خان ترکئی نےیہ بھی کہاکہ گزشتہ دورحکومت میں55ہزاراساتذہ بھرتی کیےجبکہ اس سال25ہزارنئےاساتذہ بھرتی کریںگے’سکولوں میں بنیادی ضروریات کی فراہمی کے ساتھ ساتھ پرائمری و مڈل سکولوں میں 6 ہزار نئے کلاس رومز بنائے جائیں گے جبکہ طالبات کےلیے 1.8 بلین کے وظائف بھی رکھے گئے ہیں۔

پشاورکی ترقی اورصفائی کےحوالےسےوزیربلدیات کاکہنا تھاکہ صوبائی دارلحکومت کوصاف ستھرارکھنےکےلئےواٹراینڈ سینی ٹیشن کمپنی پشاور کو2ارب روپےمہیا کیےجائیں گےجبکہ شہرکی ترقی اوراپ لفٹ کےلئے4.5 ارب روپے رکھے گئے ہیں جو کہ رنگ روڈ، نیو بس اسٹینڈ، ریگی ماڈل ٹاؤن کی تعمیر و بحالی پر خرچ کیے جائیں گے۔

صوبائی وزیرکااسمبلی اجلاس سےخطاب میں کہناتھاکہ ٹانک میں ہماراایم پی اےاورایم این اےنہ ہونےکےباوجود ضلع کواپ لفٹ اور بیوٹیفکیشن پروجیکٹ میں شامل کیا۔اسی طرح ضلع کرک میں گیس کی فراہمی کےلیےکام کیاجارہاہےجبکہ ضلع اپر دیر کی ترقی کے لیے بھی اس بجٹ میں فنڈزرکھے ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.