Latest Urdu news from Pakistan - Peshawar, Lahore, Islamabad

عوام احتساب کےعمل کو کامیابی سے ہمکنارکرنےکیلئے تعاون کریں.شاہ فرمان

موجودہ وقت میں اس مسئلےکی سنگینی کے منفی اثرات انفرادی ہی نہیں بلکہ قومی وبین الاقوامی سطح پربھی عیاں ہیں،معروضی حقائق کے پیش نظرہرسال وطن عزیزپاکستان میں بھی 9دسمبر عالمی یوم انسداد بد عنوانی کےطور پرمنایا جاتاہے جس کا مقصد اس ضمن میں انفرادی ، قومی اوربین الاقوامی سطح پر شعور و آگہی کو فروغ دیکراس لعنت کے تدارک کیلئے باہم یکجہتی یقینی بناناہے،گورنرخیبرپختونخوا کاپیغام

پشاور۔گورنرخیبرپختونخوا شاہ فرمان نے عوام سے اپیل کی ہےکہ وہ حکومت کی انسداد بدعنوانی کی مروجہ پالیسی کے مطابق احتساب کے عمل کو کامیابی سے ہمکنار کرنے کیلئے بھر پور تعاون کریں۔ اس سےنہ صرف قو می چیلنجوں سےکامیابی کےساتھ عہدہ برآ ہونے میں مدد ملے گی بلکہ ایک میرٹ پر مبنی شفاف نظام کی تشکیل کے ساتھ ساتھ انفرادی حیثیت میں بھی مسا ئل و مشکلات کم کر نے میں مدد ملےگی۔

یہ بات انہوں نےعالمی یوم انسداد بدعنوانی کےموقع پراپنےایک پیغام میں کہی ہے۔گورنرخیبرپختونخوا کےپیغام کا مکمل متن درج ذیل ہے۔”بد عنوانی کےنتیجے میں پر وان چڑھنےوالےمسائل زندگی کےہرشعبےمیں معاشرے کیلئےناسورکی طرح رستے ہوئےزخم کی مانند ہوتےہیں۔

مو جودہ وقت میں اس مسئلےکی سنگینی کےمنفی اثرات انفرادی ہی نہیں بلکہ قومی وبین الاقوامی سطح پر بھی عیاں ہیں۔معروضی حقائق کے پیش نظر ہر سال وطن عزیزپاکستان میں بھی 9دسمبر عالمی یوم انسداد بد عنوانی کے طور پرمنایا جاتاہےجس کا مقصد اس ضمن میں انفرادی ، قومی اور بین الاقوامی سطح پر شعور و آگہی کو فروغ دیکراس لعنت کے تدارک کیلئے باہم یکجہتی یقینی بنانا ہے۔

مالیاتی بد عنوانی در حقیقت خا ص طورپر غربت،نااہلی، ناانصافی ،اخلاقی پستگی اور بد امنی جیسےسنگین مسائل کو جنم دیتی ہے ۔وطن عزیز میںدرپیش صورتحال کے پیش نظر اس نوع کے مسا ئل کسی بڑے عفریت سے کم نہیں۔ حکومتی اداروں میں اس لعنت کا سرایت کر جانا قومی سطح پر نا قابل تلافی نقصانات کا با عث ثا بت ہوتا ہے۔

انہی حقائق کے تناظرمیں انسداد بد عنوانی قو می تر جیحات میں سر فہرست ذمہ داری بن چکی ہے۔لہذا آج اس مسئلے سے عہدہ بر آ ہونے کیلئےجس قدر مو زوں حا لات و ماحول دستیاب ہے شاید ما ضی میں اس کی مثال کم ہی ملے۔ یہ صورتحال یقینا حوصلہ افزابھی ہےاور وقت کا تقا ضا بھی ۔یقینا قانون کی با لا دستی اور انصاف و میرٹ پرسختی سے کاربند ہونا ہی بہترین حکمت عملی قرار پاتی ہے۔بد عنوانی سے پا ک معاشرے کے قیام کیلئے یہ امر بھی اشد ضروری ہے کہ انفرادی و اجتما عی ہرحیثیت میں جر ائت و استقلال اور خد مت کے جذبے سے قانون کی پا سداری بھی یقینی بنا ئی جا ئے ۔

یہی در حقیقت نہ صرف سما جی و معاشی خوشحالی کے اعلیٰ مقاصد کا حصول ممکن بنانے کیلئے عمدہ لا ئحہ عمل ہو سکتا ہےبلکہ قوموں کی برادری میں با وقارمقام یقینی بنا نےکا بہترین انداز بھی ۔اس تاریخی مو قع پرمیں وطن عزیز خا ص طور پرخیبر پختونخوا کےعوام سے اپیل کرتا ہوںکہ وہ حکومت کی انسداد بدعنوانی کی مر وجہ پالیسی کے مطابق احتساب کے عمل کو کامیابی سے ہمکنار کرنے کیلئے بھر پور تعاون کریں۔اس سے نہ صرف قو می چیلنجوںسے کامیابی کےساتھ عہدہ بر آ ہو نے میں مدد ملے گی بلکہ ایک میرٹ پر مبنی شفاف نظام کی تشکیل کے ساتھ ساتھ انفرادی حیثیت میں بھی مسا ئل و مشکلات کم کر نے میں مدد ملے گی ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.