Latest Urdu news from Pakistan - Peshawar, Lahore, Islamabad

نواز شریف کا دفاع کرنےوالےلوگوں کو شرم آنی چاہیے.وزیر اطلاعات چوہدری فواد حسین

نوازشریف اورآصف علی زرداری بےنقاب ہوگئےہیں دنیا کےکرپٹ لوگوں میں نوازشریف کا نام آیا،ملیں صرف کاغذوں میں تھیں لاکھوں ڈالرز مریم نواز اور نواز شریف کے ڈرائیورز کے اکاؤنٹس میں آتےرہے،یہ پیسہ کسی کےباپ کا نہیں عوام کا ہےمیڈیا سےگفتگو

اسلام آباد۔وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری نےکہا ہےکہ جو لوگ اب بھی نوازشریف کا دفاع کررہےہیں انہیں شرم آنی چاہیےنوازشریف اور آصف علی زرداری بےنقاب ہوگئےہیں دنیا کےکرپٹ لوگوں میں نوازشریف کا نام آیا،ملیں صرف کاغذوں میں تھیں لاکھوں ڈالرز مریم نواز اور نوازشریف کےڈرائیورز کےاکاؤنٹس میں آتے رہے،یہ پیسہ کسی کے باپ کا نہیں عوام کا ہے۔

پیرکو نیب ریفرنس میں نواز شریف کو سزا ہونےکےبعد یہاں پریس کانفرنس کرتےہوئےوفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری نےکہاکہ نواز شریف کو پورا موقع دیا گیا تھا لیکن وہ منی ٹریل پیش نہیں کرسکے۔انہوں نےکہا کہ احتساب قانون شق 9 کےتحت اگر پیسوں کا ریکارڈ پیش نہیں کیاجاتا تو وہ ناجائزکمائی تصور ہونگے۔

انہوں نے کہا کہ لاکھوں ڈالرز مریم نواز اور نواز شریف کےڈرائیورز کے اکاؤنٹس میں آتے رہے، یہ پیسہ کسی کے باپ کا نہیں بلکہ عوام کا ہے، غریب کا پیٹ کاٹ کر پیسہ باہر منتقل کیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ اتنے ثبوت کے بعد جو لوگ اب بھی نواز شریف کا دفاع کررہےہیں انہیں شرم آنی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ دنیا کے کرپٹ لوگوں میں نواز شریف کا نام آیا ہے۔انہوں نےکہا کہ وزیراعظم عمران خان سے 40سال کا حساب مانگا گیاتو انہوں نے نے 40سال قبل لئے گئے فلیٹ کی رسیدیں تک عدالت میں جمع کرادیں۔

انہوں نے کہا کہ نوازشریف بیرون ملک بنائے گئے اثاثوں کا حساب عدالتوں کو نہیں دے سکے۔انہوں نےکہا کہ یہ پراپرٹیز نواز شریف نے خریدی اور بچوں کےنام کی۔انہوں نےکہا کہ بچےوالدین کونہیں جانتے،والدین بچوں کونہیں جانتےاوردونوں نے مل کر ملبہ دادا پرڈال دیا۔ انہوں نےکہاکہ3بار منتخب وزیراعظم کےبچوں کاموقف ہےکہ وہ پاکستانی شہری نہیں ہیں،نوازشریف کابھی مؤقف ہےکہ بچےبرطانوی شہری ہیں،ان پرملکی قانون لاگو نہیں ہوتا۔

انہوں نےکہاکہ بچے اتنے نالائق ثابت ہوئے ہیں کہ وہ اپنے والد کے دفاع کیلئے سامنے نہیں آئے۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے اپنے بچے باہر رکھے ہوئے ہیں اور یہاں کرپشن کررہے ہیں، نواز شریف اور آصف زرداری آج بے نقاب ہوگئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہمیں بولا جا رہا ہے کہ یہ انتقامی کارروائی ہے لیکن نہ نیب قوانین ہم نے بنائے نہ 2015ء میں یہ کیسز ہم نے ان کیخلاف بنائے۔

انہوں نے کہا کہ پاناما کیس میں پہلی بار پتہ چلادنیا کی کن شخصیات نےجعلی کاغذات سے جائیدادیں بنائیں۔انہوں نےکہا کہ العزیزیہ کیس میں محمد نوازشریف کو 7سال قید اور 25ملین ڈالر جرمانہ ہوا ہےجبکہ فلیگ شپ ریفرنس میں نواز شریف کو تکنیکی بنیاد پر بری کیا گیا۔

چودھری فواد حسین نےکہاکہ العزیزیہ کےبعد 18دن میں ہل میٹل کےنام سےنئی مل کھڑی کردی گئی، ہل میٹل 2010 تک مکمل خسارے میں تھی، لیکن نواز حکومت آنےکےبعد ہل میٹل نےترقی کرنا شروع کردی اوریہ سونےکےانڈے دینے لگی۔انہوں نےکہاکہ2010سے2015تک خسارے میں رہنے والی مل سے 10لاکھ ڈالر منتقل کئے گئے،اصل میں کوئی مل موجود ہی نہیں تھی ۔

وزیر اطلاعات نےکہا کہ منی لانڈرنگ کیلئےجعلی کمپنیاں بنائی گئیں جوپیسہ گردش کررہی تھیں۔انہوں نےکہاکہ پاکستان میں کمیشن لے کر پیسہ باہر جاتا تھا،کچھ پیسہ باہر رہ جاتا اور کچھ پاکستان آجاتا،اس پیسےسےبیرون ملک جائیدادیں خریدی گئیں۔

انہوں نےکہاکہ ٹھگ سیریز ون العزیز مل ہےجبکہ ٹھگ سیریز ٹو اومنی گروپ ہے۔وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری کےہمراہ پریس کانفرنس کرتےہوئے وزیراعظم کےمعاون خصوصی شہزاد اکبر نےکہاکہ کہ جعلی اکاؤنٹس کیس میں جے آئی ٹی رپورٹ کی سمری ہوش اْڑا دینے والی ہے،جے آئی ٹی کی تحقیقات کو داد دینی چاہئے جس طرح جے آئی ٹی نے منی لانڈرنگ کو بے نقاب ہے وہ لائق تحسین ہے۔

انہوں نےکہاکہ جےآئی ٹی کی رپورٹ نےسندھ میں زرداری سسٹم کو عیاں کردیاہے،زرداری کی جعلسازی میں سندھ حکومت نےمکمل معاونت کی۔انہوں نےکہا کہ نوازشریف اورآصف زرداری کےدرمیان گٹھ جوڑ تھا اورلوٹ کھسوٹ کیلئےایک منظم سسٹم بناہوا تھا۔

شہزاد اکبر نےکہاکہ ہمیں اب سمجھ آرہی ہےکہ پاکستان کوکیوں گرےاوربلیک لسٹ میں ڈالاجارہاتھا،اس ملک کےنظام کوچند کرپٹ حکمرانوں کےلیےکس طرح باندی بنادیا گیا وہ اس جےآئی ٹی رپورٹ سےسمجھ آرہاہےجب ہ ان لوگوں کو لگ رہا تھا کہ یہ کبھی نہیں پکڑے جائیں گے۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی نے کہا کہ لوٹ کھسوٹ کے پیسوں کو چھپانے کیلئے پیچیدہ جال بنا گیاتھا۔انہوں نےکہاکہ اومنی گروپ میں جے آئی ٹی نے11500 اکاؤنٹس کا جائزہ لیا ہےاور924افراد کے انٹرویو کئےگئےہیںجس کےبعد پتہ چلا کیسےیہ لوگ پیسے ان اکاؤنٹس میں گھماتےپھراتےرہے،ان میں100سےزائد جعلی اکاؤنٹس بھی تھےجن میں اومنی گروپ کے32 جعلی اکاؤنٹس بھی شامل تھے،ان تمام پیسوں کو گھمانےاورپھرانےکےبعد ان پیسوں کو جائزپیسےمیں شامل کردیا جاتاتھا اورزرداری گروپ کےتمام بلزان جعلی اکاؤنٹس سےہی اداکیے جاتے رہے ہیں۔

انہوں نےکہاکہ ٹھیکوں کےکمیشن کی کمائی کوچھپانے کیلئےجعلی بینک اکاؤنٹس اورایک بینک کھڑا کیاگیا۔انہوں نےکہاکہ اومنی گروپ کےجعلی اکاؤنٹس سے9ارب روپےلیکرسمٹ بینک کی ایکویٹی پوری کی گئی،کھربوں روپےکی اراضی غیرقانونی طورپرکراچی منتقل کی گئی۔

انہوں نےکہاکہ صرف بحریہ گروپ کو11ہزار251ایکڑ اراضی دی گئی۔انہوں نےکہاکہ اومنی گروپ کو54ارب روپےکاقرض دیا گیااور54ارب کے قرض کےعوض صرف 14سے 15ارب روپے کے اثاثے رہن رکھے گئے۔انہوں نے کہا کہ زیادہ ترقرض نیشنل بینک آف پاکستان سے دلوایا گیا۔

انہوں نے کہا کہ ساری جعلسازی کا مرکزی کردارآصف علی زرداری تھا۔ انہوں نےکہا کہ فریال تالپور کے گھر میں لگنے والے سیمنٹ کی ادائیگی تک جعلی اکاؤنٹس سےکی گئی۔انہوں نے کہا کہ بلاول ہاؤس پر ہونیوالے اخراجات ،فضائی ٹکٹس اور جلسوں میں استعمال ہونے والے ٹرکوں کی ادائیگی،آصف زرداری اور ان کے دوستوں کے 110بیرونی دوروں کی ادائیگی بھی جعلی اکاؤنٹس سے کی گئی انہوں نے کہا کہ حتی کہ سالگرہ پر کٹنے والے کیک کا ایک لاکھ روپے بل بھی جعلی اکاؤنٹ سے اداکیا گیا۔

انہوں نےکہا کہ فریال تالپورنےجائیدادیں اپنے محافظین اور ڈرائیورز کےنام کررکھی تھیں۔معاون خصوصی نےکہاکہ اومنی گروپ جےآئی ٹی نے16نیب ریفرنسزدائرکرنےکی سفارش کی ہے۔انہوں نےکہاکہ آصف علی زرداری کےوکیل فاروق نائیک کےنام پربھی جعلی اکاؤنٹ سامنےآچکاہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.