Latest Urdu news from Pakistan - Peshawar, Lahore, Islamabad

چین کومعاشی ترقی کیلئےکمیونسٹ پارٹی کی جانب سےدی گئی سمت پرکوئی ڈکٹیٹ نہیں کرسکتا-چینی صدر

چین کی دھرتی ناقابل تقسیم ہے،چینی کمیونسٹ پارٹی کےانضباط کو مضبوط بنانے پرگامزن رہیں گے،انسداد بدعنوانی کےراستے پرگامزن ،کھلےپن کو وسعت د یںگے،اپنی ترقی کیلئے دیگر ممالک کے عوام کے حقوق کااحترام کیاجاناچاہئے،اپنے جائزحقوق و مفادات کو کبھی بھی ترک نہیں کرے گا،چین ترقی کو اولین کی حیثیت دے گا،چین کے نظام کی خوبی کو مضبوط بنایا جائےگاخطاب

بیجنگ۔چینی صدرشی جن پنگ نےکہاہےکہ چین کومعاشی ترقی کیلئےکمیونسٹ پارٹی کی جانب سےدی گئی سمت پرکوئی ڈکٹیٹ نہیں کرسکتا،چین کی دھرتی نا قابل تقسیم ہے،چینی کمیونسٹ پارٹی کے انضباط کو مضبوط بنانے پرگامزن رہیں گے،انسداد بدعنوانی کے راستے پر گامزن،کھلے پن کو وسعت د یں گے،اپنی ترقی کیلئے دیگر ممالک کےعوام کے حقوق کااحترام کیا جانا چاہئے، اپنے جائز حقوق و مفادات کو کبھی بھی ترک نہیں کرے گا،چین ترقی کو اولین کی حیثیت دے گا،چین کے نظام کی خوبی کو مضبوط بنایا جائے گا۔

چینی میڈیا کے مطابق کمیونسٹ پارٹی کی جانب سےمعاشی ترقی کے40 سال مکمل ہونے پر کانفرنس کا انعقاد کیا گیا جس سے خطاب کرتے ہوئے چینی صدر شی جن پنگ نے کہا کہ چین کھلے پن کو فروغ دے گا اور بنی نوع انسان کے ہم نصیب معاشرے کی مشترکہ تعمیر کے لیے کوشش کرتا رہے گا۔

انہوں نے کہا کہ چین باہمی احترام ،تعاون و مشترکہ مفادات اور انصاف پر مبنی نئے طرز کے بین الاقوامی تعلقات کے قیام کو فروغ دے گا۔ اپنی ترقی کے راستے کے انتخاب میں مختلف ممالک کےعوام کے حقوق کااحترام کیاجاناچاہیئے۔چین دوسرے ممالک کے اندرونی معاملات میں مداخلت کی مخالفت کرتا ہے اورطاقتور فریق کی جانب سے کمزور فریق پر مجبور کرنیکی مخالفت کرتا ہے۔چین دی بیلٹ اینڈ روڈ کی تعمیر سے استعفادہ کرتے ہوئے مختلف فریقین کے ساتھ عالمی تعاون کے نئے پلیٹ فارم متعارف کروائیگا۔

شی جن پنگ نےکہا کہ چین دوسرے ممالک کےمفادات کو نقصان پہنچانےکی قیمت پرکبھی خود کو ترقی نہیں کرےگا،تاہم چین اپنےجائز حقوق و مفادات کوکبھی بھی ترک نہیں کرےگا۔چین دفاعی نوعیت کی پالیسی پر ثابت قدم رہاہے۔چین کبھی بھی بالادستی کا اختیارنہیں کرےگا۔

چینی صدرشی جن پنگ نےکہاکہ چین ترقی کو اولین کی حیثیت دے گا۔ جدید اقتصادی نظام کی تعمیر کو تیز کیاجائےگا،مزید صحت مند، مزید موثر ،مزید برابراورمزید پائدارترقی پرعملدرآمد کے لیے کوشش کی جائے گی۔ترقیاتی طریقہ کارکو بدل دیا جائے گا، اقتصادی ساخت کو بہتر بنایا جائے گا اورترقی کی صلاحیت میں اضافہ کیا جائے گا۔

تخلیقات کے ذریعے ترقی کو فرغ دینے کی حکمت عملی کو آگے بڑھایا جائے گا۔اقتصادی و سماجی ترقی کے لیے نئے ذرائع فراہم کئے جائیں گے۔ شی نے کہا کہ چین کوچینی خصوصیات کے حامل سوشلسٹ نظام کو مسلسل اور بہتر طور پر فروغ دینا چاہیئے اور چین کے نظام کی خوبی کو مسلسل بہتر اور مضبوط بنانا چاہیئے۔

ان کا کہنا تھا کہ چین عوامی ملکیت کی معیشت کو مضبوط بنانے کے ساتھ ساتھ اورآگےبڑھائیگا اورنجی معیشت کی ترقی کی حوصلہ افزائی ،حمایت اور رہنمائی کرے گا۔

چینی صدرنےکہا کہ چین کسی ملک سے احکامات نہیں لے گا جب کہ سوشل ازم کا عظیم پرچم چین کی سرزمین پر ہمیشہ سربلند رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ چین کو کسی بھی ملک سےخطرہ نہیں اور چین کو اپنی مرضی کے مطابق نہیں دھکیلا جاسکتا، کوئی اس پوزیشن میں نہیں کہ چین کے لوگوں کو یہ ڈکٹیٹ کراسکے کہ انہیں کیا کرنا چاہیے اور کیا نہیں کرنا چاہیے۔

سی آر آئی کےمطابق شی جن پنگ نےکہا کہ چین کوایک ملک دو نظام، ہانگ کانگ کے باشندوں کے ہاتھوں میںہانگ کانگ کی حکمرانی اصول اور مکاو کے باشندوں کےہاتھوں مکاوکی حکمرانی کےاصول پر مکمل طور پرعمل درآمدجاری رہنا چاہئیے۔

تاکہ ہانگ کانگ اور مکاو کی طویل عرصے تک خوشحالی واستحکام کو قراررکھا جاسکے۔اس کےساتھ ساتھ انہوں نے پرزور الفاظ میں کہا کہ ہمیں ایک چین کے اصول اور سنہ انیس سو نناوے میں طےشدہ اتفاق رائے پر گامزن رہنا چاہئیے۔

آبنائےتائیوان کےدونوں کناروں کے درمیان باہمی تعلقات کی پرامن ترقی کی بنیاد کو فروغ دیا جانا اورباہمی اقتصادی وثقافتی تعاون کو مضبوط بنایا جانا چاہئیے۔

تاکہ دونوں کناروں کےعوام اس سےفائدہ اٹھاسکیں۔انہوں نے کہا کہ قومی خودمختاری اورعلاقائی سالمیت کے تحفظ کےلئےچین کے پاس مضبوط سیاسی عزم اور طاقتورصلاحیت موجودہے۔

ان کاکہنا تھا کہ چین کی دھرتی نا قابل تقسیم ہے۔شی جن پنگ نےکہاکہ چین چینی کمیونسٹ پارٹی کےانضباط کو مضبوط بنانےپرگامزن رہے گا۔ چین سےمتعلق امورسےاچھی طرح نمٹنےکی کلید چینی کمیونسٹ پارٹی ہے۔ہمیں چینی کمیونسٹ پارٹی کےاتحاد اور تخلیق کو مسلسل طور پر فروغ دینا چاہئیے۔اس کے ساتھ ساتھ، چین انسداد بدعنوانی کے راستے پر گامزن رہے گا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.