Latest Urdu news from Pakistan - Peshawar, Lahore, Islamabad

کبھی کسی کی جنگ لڑیں گےاورنہ ہی کسی کےسامنےجھکیں گے.وزیراعظم عمران خان

ہم سب سےامن چاہیں گےبھارت میں مسلمانوں کا آج کوئی قائد نہیں ہےملک کو نبی کریم ۖکےاصولوں پراٹھائیں گےبلوچستان کےطلباء سے گفتگو

اسلام آباد۔وزیراعظم عمران خان نےایک بار پھرواضح کیاہےکہ کبھی کسی کی جنگ لڑیں گےاورنہ ہی کسی کےسامنےجھکیں گےہم سب سے امن چاہیں گےبھارت میں مسلمانوں کا آج کوئی قائد نہیں ہےملک کو نبی کریم ۖکےاصولوں پراٹھائیں گے۔

جمعہ کو بلوچستان سےتعلق رکھنےوالےطلبہ سےخطاب کرتےہوئےوزیراعظم عمران خان نےکہاکہ قوم نظریےسےہےاورنظریہ نہ رہے تو قوم نہیں رہتی،قائداعظم نےپوری کوشش کی کہ مسلمان اورہندو متحد ہوکر رہیں،قائداعظم نےمحسوس کیاکہ مسلمانوں کےلییالگ ملک ضروری ہے،ہمیں سمجھنا چاہیےکہ ملک کیوں بنا، آج بھارت میں جومسلمانوں کا حل ہےوہاں نظر ہی نہیں آتاکہ مسلمانوں کو برابر کے حقوق ملیں گے،بھارت میں مسلمانوں کا آج کوئی قائد نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ جمہوریت کا مطلب حکمران کا قانون کےنیچےہوناہےلیکن ہم جمہوریت سے بادشاہت پرآگئے،چین نےمدینہ کی ریاست کےاصولوں پرچل کر70کروڑ لوگوں کو غربت سےنکالا مگر پاکستان میں امیرامیرہوتاگیا اورغریب غریب ہی رہ گیا،جو علاقےآگےتھےان پرزیادہ پیسہ لگایا گیا جس سےکم ترقی یافتہ علاقے مزید پیچھےرہ گئے۔

عمران خان نےکہاکہ اندازہ لگایا تو پتا چلا کہ لاہورمیں ایک انسان پر70 ہزار روپے اوسطاً خرچہ کیےگئےچھوٹےعلاقےراجن پورمیں جہاں پیسےکی ضرورت تھی وہاں اوسطاً ایک انسان پرڈھائی ہزارروپےخرچ کیےگئے،اس طرح امیراورغریب علاقوں میں فرق بڑھتا گیا۔

وزیراعظم نےکہاکہ اس ملک کو اٹھاناہےتو نبی کریم ۖکےاصولوں پر اٹھائیں گے،ہماری کوشش ہےاپنےکمزورعلاقوں کو آگےلائیں،بلوچستان پیچھےرہ گیاہےتاہم اب اسےاچھا وزیراعلیٰ ملا ہے،ہم خواتین کیلئے اسپیشل پروگرام لارہے ہیں،ان کےجائیداد میں حصےکیلئےایک قانون بنارہے ہیں جس پرعملدرآمد ہو۔

وزیراعظم عمران خان نےکہا کہ ہم نےپاکستان میں اپنےآپ پرظلم کیا،ہمارے لیڈروں نےقوم اور دوسرے ملکوں کے سامنے تاثر دیا کہ اگر کسی سپر پاور کی مدد نہیں کریں یا ان کی جنگ نہیں لڑیں گے تو تباہ ہوجائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ آج ہمارے عظیم ملک نہ بننے کی وجہ جھکنا اورہاتھ پھیلانا ہےجس نے ہماری قومی غیرت ختم کردی،ہم نے اپنے لوگوں کو بتایا کہ سپر پاور کی جنگ نہ لڑی تو نہیں بچیں گے،مگر آج واضح کردوں نہ کبھی کسی کی جنگ لڑیں گےاورنہ ہی کسی کے سامنے جھکیں گے، سب سے امن چاہیں گے۔

وزیراعظم نے کہاکہ افغانستان میں ہمیں ڈومورکہاگیا اورکہاگیاکہ پیسےدےرہے ہیں جنگ لڑیں،میں نےپہلے ہی کہاتھاکہ افغانستان میں جنگ مسئلےکاحل نہیں،شکرہےجو ڈومورکہہ رہےتھےوہ آج امن قائم کرنےاورمذاکرات کیلئےہمیں کہہ رہےہیں ہم اسی طرح آگےبڑھیںگےاوریہ قوم عظیم بنے گی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.