Latest Urdu news from Pakistan - Peshawar, Lahore, Islamabad

کشمیریوں کی قتل عام پر دنیااتنی بےحس کیسےہوسکتی ہے۔وزیر خارجہ

اسلام آباد:وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نےمقبوضہ کشمیرمیں بھارتی مظالم پر خاموش رہنےپرعالمی برداری کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئےکہاہےکہ دنیا اتنی بےحس کیسےہوسکتی ہے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتےہوئےوزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نےکہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج قتل عام پراتر آئی ہے، پہلے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے ہوائی فائرنگ کی جاتی تھی لیکن اب شہید کرنے کےلیےسیدھی فائرنگ کی جاتی ہے۔

وزیر خارجہ نےکہا کہ دنیا کی ترجیحات میں کشمیر شامل نہیں لیکن وہ اتنی بےحس اور لاتعلق کیسےہوسکتی ہے،انسانی حقوق کی تنظیموں کو بولنےمیں توکوئی مشکل نہیں ہونی چاہیے،اگر کشمیر پر آوازاٹھانےمیں دقّت ہے تو کم ازکم انسانی حقوق پر تو آواز اٹھائیں۔
شاہ محمود قریشی کاکہناتھا کہ 2014 کے بعد بھارتی مظالم نےحدیں پارکرلی ہیں،پلوامہ میں ایک روزمیں14شہید اور300سےزائد زخمی ہوئےجن میں سےبہت سےزخمیوں کی حالت تشویشناک ہے،مقبوضہ کشمیرمیں2018میں جوبھارتی ظلم وستم ہوا وہ ناقابل بیان ہے،بھارتی فورسزکی جانب سے2016سےاب تک 500 نہتےکشمیری شہید کئےگئےہیں،18ماہ کی بچی آنکھ میں چھرہ لگنےسےبینائی سےمحروم ہو گئی۔

وزیر خارجہ نےمزید کہاکہ اقوام متحدہ کے سیکٹری جنرل،انسانی حقوق کےکمشنراوراو آئی سی کو خط لکھ کرکہا ہےکہ مقبوضہ کشمیر میں مداخلت کریں،تمام پاکستانی مشنز کو مسئلے کو اجاگر کرنے کی ہدایت کی ہےکہ عالمی برداری کی توجہ دلائیں کہ وہ انسانیت سوز قتل عام کو فی الفور رکوانے میں کردار ادا کریں، امید ہے عالمی برادری بھارتی ریاستی دہشتگردی پر آواز اٹھائے گی۔

وزیر خارجہ کاکہنا ہےکہ 5 فروری کو کشمیر کے حوالے سے لندن میں عالمی کانفرنس کی تجویز ہے،کشمیر ایشو پر تمام سیاسی جماعتیں ایک مؤقف رکھتی ہیں اور تمام جماعتیں سیاسی اختلافات کو بالائے طاق رکھتے ہوئے کشمیر میں ظلم وستم کیخلاف نکلیں۔

ان کا کہنا تھا کہ 19 فروری کو برسلز میں یورپی یونین اور یورپین پارلیمنٹ کی مسئلہ کشمیر پر پبلک سماعت ہوگی، یورپین پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر پر پبلک سماعت کی حمایت بھی کریں گے اورحصہ بھی بنیں گے۔

انہوں نے کہا کہ کل قومی اسمبلی کے اجلاس میں کشمیر میں جاری بربریت کیخلاف متفقہ مذمتی قرارداد بھی آنی چاہیے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز بھارتی فوج نے ضلع پلواما میں آپریشن کے نام پر بربریت کا مظاہرہ کرتے ہوئے مزید 10 کشمیری نوجوانوں کو شہید کیا تھا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.