Latest Urdu news from Pakistan - Peshawar, Lahore, Islamabad

خطرات کی وجہ سے پی ڈی ایم سے جلسہ منسوخ کرنے کے لیے کہا۔ وزیر داخلہ بلوچستان

0 59

کوئٹہ: وزیر داخلہ بلوچستان میر ضیا لانگو نے کہا ہے کہ دشت میں سکیورٹی اداروں کی کارروائی میں کالعدم تنظیم کا اہم کمانڈر 3 ساتھیوں سمیت مارا گیا ہے اور ان خطرات کی وجہ سے ہی پی ڈی ایم سے جلسہ منسوخ کرنے کے لیے کہا۔

 وزیر داخلہ بلوچستان میر ضیا لانگو نے سی ٹی ڈی حکام کے ہمراہ  پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ دشت میں فائرنگ کے تبادلے میں ہلاک ہونے والا کالعدم تنظیم کا کمانڈر عبدالکریم کرد، آئی جی پولیس ہاؤس، سمنگلی ائیر بیس اور  خالد ائیر بیس سمیت کوئٹہ میں دہشتگردی کی بڑی وارداتوں میں ملوث تھا۔ انہوں نے بتایا کہ یہ اب تک افغانستان سے 30 خود کش حملہ آور بلوچستان لا چکا تھا اور بلوچستان حکومت نے اس کے سر کی قیمت 20 لاکھ روپے رکھی تھی۔

میر ضیا لانگو نے کہا کہ بلوچستان میں سکیورٹی اداروں نے بہت بڑی کامیابی حاصل کرکے صوبے میں دہشتگردی کا بڑا منصوبہ ناکام بنادیا ہے، ہمیں پکڑے گئے کچھ دہشتگردوں سے دہشتگردی کے تھریٹ ملے تھے اور ان خطرات کے پیشِ نظر ہم نے پی ڈی ایم سے جلسہ منسوخ کرنے کے لیے کہا ہے۔

وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ ہماری درخواست کے باوجود پی ڈی ایم جلسہ کرے گی تو ہم انہیں مکمل سکیورٹی فراہم کریں گے، پی ڈی ایم جلسے کے لیے 4 ہزار سے زائد اہلکار تعینات ہوں گے۔

دوسری جانب نیوز کانفرنس میں ڈی آئی جی سی ٹی ڈی اعتزاز گورایہ نے بتایا کہ ہمارے پاس دشت میں 6 دہشتگردوں کی موجودگی کی اطلاع تھی، کارروائی میں 4 مارے گئے ہیں جب کہ دیگر 2 دہشتگردوں کی تلاش کے لیے آپریشن جاری ہے۔

اعتزاز گورایہ نے بتایا کہ ہلاک دہشتگردوں سے 2 خودکش جیکٹس، دستی بم، اسلحہ اور موبائل فون برآمد ہوئے ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.