Latest Urdu news from Pakistan - Peshawar, Lahore, Islamabad

چمن بارڈر پر تاجروں کی جانب سے نویں روز بھی پیدل آمد و رفت کی پالیسی کے خلاف دھرنا جاری

چمن بارڈر پر تاجروں کی جانب سے نویں روز بھی پیدل  آمد و رفت کی نئی پالیسی کے خلاف دھرنا جاری ہے جبکہ بلوچستان کے صوبائی وزیر نے ریاستی پالیسی پر کسی بھی سمجھوتے سے انکار کردیا ہے۔

بلوچستان کے نگران وزیر اطلاعات جان اچکزئی کا کہنا ہے کہ بارڈرز پر  ’ون ڈاکیومنٹ پالیسی‘ لاگو کرنا ریاست پاکستان کا فیصلہ ہے جس پر  یقینی عمل درآمد ہوگا، ون ڈاکیومنٹ رجیم پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا۔ جان اچکزئی کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت بارڈر ایریا میں تجارتی سرگرمیوں کے فروغ، تجارتی سہولیات کی فراہمی اور مارکیٹوں کے قیام سمیت دیگر گورننس کے مسائل کے مؤثر حل کیلئے تمام تراقدامات کیلئے تیار ہے تاہم ون ڈاکیومنٹ رجیم پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ دنیا کے تمام ممالک میں بین الاقوامی بارڈر کراسنگ پر ون ڈاکیومنٹ کا ہونا ضروری ہوتا ہے۔ اس لیے ریاست پاکستان نے بھی ملک کے وسیع تر مفاد میں یہ فیصلہ کیا ہے کہ بارڈر کراسنگ پر ون ڈاکیومنٹ رجیم کو لاگو کیا جائے تا کہ آمد و رفت کو درست انداز میں مانیٹر کیا جا سکے۔

ادھر چمن میں باب دوستی بارڈر سے پیدل آمدورفت کیلئے نئی شرائط پر  تاجروں کی جانب سے نویں روز بھی احتجاج جاری رہا۔ دھرنے کے باعث چمن میں انسدادِ پولیو کی سات روزہ خصوصی مہم کو بھی ملتوی کرنے کا فیصلہ کردیا گیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.